کورونا: بھارت میں سرکاری و نجی ملازمین کیلیے سرکاری ایپ کا استعمال لازم قرار کورونا: بھارت میں سرکاری و نجی ملازمین کیلیے سرکاری ایپ کا استعمال لازم قرار
نئی دلی: بھارت میں کورونا وائرس کے دوران تمام سرکاری و نجی سیکٹر میں سماجی فاصلے کو یقینی بنانے کے لیے حکومت کی طرف... کورونا: بھارت میں سرکاری و نجی ملازمین کیلیے سرکاری ایپ کا استعمال لازم قرار

نئی دلی: بھارت میں کورونا وائرس کے دوران تمام سرکاری و نجی سیکٹر میں سماجی فاصلے کو یقینی بنانے کے لیے حکومت کی طرف سے لانچ کردہ بلیو ٹوتھ ٹریسنگ ایپ کا استعمال لازم قرار دیا گیا ہے۔

بھارت میں کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے سلسلے میں حکومت نے گزشتہ ماہ ایک ایپ متعارف کرائی تھی جس کا نام آروگیا سیتو یعنی ہیلتھ برج رکھا گیا ہے جس کے لیے بھارت کے نیشنل انفارمیشن سینٹر میں بلیو ٹوتھ اور جی پی ایس سسٹم بنایا گیا ہے۔

یہ ایپ صارفین کو ایسے افراد سے متعلق آگاہ کرے گی جس میں صارف ایسے شخص سے رابطے میں ہوسکتا ہے جس میں بعد میں کورونا کی تشخیص ہوئی ہو۔

بھارتی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہےکہ تمام سرکاری اور نجی سیکٹر کے ملازمین کے لیے ایپ کا استعمال یقینی بنایا جائے گا۔

وزارت داخلہ نے کہا ہےکہ یہ تمام کمپنیوں اور اداروں کے سربراہوں کی ذمہ داری ہوگی کہ وہ ملازمین میں اس ایپ کا 100 فیصد استعمال یقینی بنائیں۔

بھارتی انفارمیشن ٹیکنالوجی کے حکام اور ایپ کے لیے پرائیویسی پالیسی بنانے والے قانون دانوں کہنا ہےکہ اس ایپ کو ایک ارب 30 کروڑ آبادی والے ملک میں مؤثر بنانے کے لیے اس کا کم از کم 20 کروڑ موبائل فونز میں انسٹال ہونا ضروری ہے۔

اس ایپ کو لازم قرار دینے کے بعد بھارت میں پرائیویسی کے حوالے سے بھی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا ہےکہ یہ اب تک واضح نہیں کہ اس سلسلے میں ڈیٹا کس طرح استعمال کیا جائے گا۔

تاہم اس سلسلے میں بھارتی حکومت کا کہنا ہےکہ ایپ سے پرائیویسی کی خلاف ورزی نہیں ہوگی کیونکہ تمام ڈیٹا گمنام طور پر جمع کیا جاتا ہے۔

alphanew