نیب سے کلیئر ہونے کیلیے مجھے بنی گالہ سے سرٹیفکیٹ لینا پڑے گا: جاوید لطیف نیب سے کلیئر ہونے کیلیے مجھے بنی گالہ سے سرٹیفکیٹ لینا پڑے گا: جاوید لطیف
 مسلم لیگ (ن) کے رہنما و رکن قومی اسمبلی میاں جاوید لطیف کا کہنا ہے کہ اینٹی کرپشن نے مجھے کلیئر ہونے کا سرٹیفکیٹ دے... نیب سے کلیئر ہونے کیلیے مجھے بنی گالہ سے سرٹیفکیٹ لینا پڑے گا: جاوید لطیف

 مسلم لیگ (ن) کے رہنما و رکن قومی اسمبلی میاں جاوید لطیف کا کہنا ہے کہ اینٹی کرپشن نے مجھے کلیئر ہونے کا سرٹیفکیٹ دے دیا لیکن لگتا ہے نیب کے لیے بنی گالہ سے سرٹیفکیٹ لینا پڑے گا۔

گزشتہ روز قومی احتساب بیورو(نیب) نے  آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں مکمل تفصیلات کا جواب طلب کرنے کے لیے مسلم لیگ (ن) کے رہنما میاں جاوید لطیف کو نوٹس بھیجا تھا۔

اس سلسلے میں جاوید لطیف آج نیب میں پیش ہوئے اور کیس کی تفصیلات سے متعلق ایک بار پھر آگاہ کیا۔

 اس سے قبل بھی جاوید لطیف  نیب لاہور میں تین بار پیش ہو چکے ہیں۔

نیب میں پیش ہونے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف نےکہا کہ آج ایک مرتبہ پھر نیب کے افسران نے مجھے دیکھا میں نے ان کو دیکھا، اینٹی  کرپشن نے مجھے کلیئر ہونے کا سرٹیفکیٹ دیا لیکن لگتا ہے مجھے بنی گالہ سے سرٹیفکیٹ لینا پڑے گا۔

لیگی رہنما جاوید لطیف کا حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہنا تھا کہ بنی گالہ میں فیصلہ ہوا ہے کہ چارلوگوں کو گرفتارکرلیا جائے توکشمیرآزاد ہو سکتا ہے جس میں مسلم لیگ (ن) کے شہبازشریف، شاہد خاقان، رانا ثناء اللہ اور جاوید لطیف کی گرفتاری شامل ہے اور اس سے ملکی مسائل بھی حل ہو جائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ  وفاقی کابینہ میں فیصلہ کیا جائے گا کہ کن کن دنوں میں کس کس کو گرفتار کرنا ہے اور تب بھی مسائل حل نہ ہوئے تو نواز شریف، مریم نواز اور مولانا فضل الرحمان کو گرفتار کیا جائے گا۔

مسلم لیگ ن کے رہنما کا کہنا تھا کہ شیخ رشید کی پیش گوئی اور سیاست کے ساتھ تحریک انصاف کی حکومت مکمل طور پر ایکسپائر ہوچکی ہے۔

خیال رہے کہ میاں جاوید لطیف چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے اطلاعات و نشریات ہیں جبک ہ ان کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں بھی شامل ہے۔

میاں جاوید لطیف این اے 121 شیخوپورہ 3 سے مسلم لیگ (ن) کے رکن قومی اسمبلی ہیں۔

alphanew