بھارتی اداکارہ اپنے اغوا اور خود پر ہونیوالے جنسی حملے پر بول پڑیں
معروف بھارتی اداکارہ بھاونا مینن نے5 سال بعد خود پر ہونے والے جنسی حملے پر خاموشی توڑ دی۔ ایک انٹرویو میں ساؤتھ انڈین فلم... بھارتی اداکارہ اپنے اغوا اور خود پر ہونیوالے جنسی حملے پر بول پڑیں

معروف بھارتی اداکارہ بھاونا مینن نے5 سال بعد خود پر ہونے والے جنسی حملے پر خاموشی توڑ دی۔

ایک انٹرویو میں ساؤتھ انڈین فلم انڈسٹری کی  معروف اداکارہ بھاونا مینن نے خود پر ہونے والے جنسی حملے سے متعلق کھل کر بات کی اور اپنے جذبات کا اظہار کیا۔

بھاونا مینن کا کہنا تھا کہ میں ایک نارمل سے محبت کرنے والی لڑکی تھی لیکن اس واقعے نے میرے زندگی بدل کے رکھ دی، سوشل میڈیا پر لوگ میری مسکراتی تصاویر دیکھتے ہیں تاہم مجھے معلوم ہے کہ میں جہنم سے ہوکر واپس آئی ہوں۔

اداکارہ کا کہنا تھا کہ کافی عرصے تک میں اس واقعےکو بھولنےکی کوشش کرتی رہی، تاہم جب 2020 میں ٹرائل شروع ہوا تو مجھے عدالت میں 15 دن تک ثبوت دینا پڑے اور  مخالف وکلا نے مجھ سے ہر طرح کے سوال کیے، مجھے ان کے سامنے ثابت کرنا تھا کہ میں بے گناہ ہوں اور میرے ساتھ ظلم ہوا ہے۔

بھاونا کا کہنا تھا کہ میری عزت کے ٹکڑے ہوگئے، بہت مشکل وقت تھا،  دوستوں، عزیزوں  اور مداحوں کی بڑی تعداد کی حمایت مجھے حاصل تھی تاہم میں اکیلا پن محسوس کرتی تھی، شاید اس وقت  میں اپنی قوت ارادی کے باعث ہی کھڑی رہی اور حالات کا مقابلہ کیا۔

خیال رہے کہ اداکارہ بھاونا مینن کو 2017 میں اس وقت اغوا کرلیا گیا تھا جب وہ بھارتی ریاست کیرالہ کے شہرکوچی میں شوٹنگ کے بعد گھر واپس آرہی تھیں، اغوا کے بعد مبینہ طور پر انہیں  جنسی حملےکا نشانہ بھی بنایا گیا۔

 اس واقعےکو اس وقت زیادہ شہرت ملی جب اغوا کے مرکزی ملزم نےگرفتاری کے بعد انکشاف کیا کہ اس کارروائی کے پیچھے اداکار دلیپ کا ہاتھ ہے ۔

خیال رہےکہ ملیالم فلموں کے اداکار دلیپ نے متعدد فلموں میں بھاوناکے ساتھ کام کیا ہے، مرکزی ملزم کے بیان کے بعد انہیں گرفتارکرلیا گیا تھا اور 3 ماہ جیل میں رہنے کے بعد اب وہ ضمانت پر رہا ہیں۔

alphanew