شوکت خانم فنڈز میں کرپشن کا الزام لگانے پر حنیف عباسی پر 50 لاکھ روپے جرمانہ شوکت خانم فنڈز میں کرپشن کا الزام لگانے پر حنیف عباسی پر 50 لاکھ روپے جرمانہ
راولپنڈی کی عدالت نے شوکت خانم اسپتال کے فنڈز میں کرپشن کا الزام لگانے پر ن لیگ کے رہنما حنیف عباسی پر 50 لاکھ... شوکت خانم فنڈز میں کرپشن کا الزام لگانے پر حنیف عباسی پر 50 لاکھ روپے جرمانہ

راولپنڈی کی عدالت نے شوکت خانم اسپتال کے فنڈز میں کرپشن کا الزام لگانے پر ن لیگ کے رہنما حنیف عباسی پر 50 لاکھ روپے جرمانہ کردیا۔

مسلم لیگ ن کے رہنما حینف عباسی کے خلاف شوکت خانم اسپتال ہرجانہ کیس کا فیصلہ سنادیا گیا۔

راولپنڈی کی عدالت نے شوکت خانم اسپتال کی جانب سے 10 کروڑ روپے ہرجانے کے دعوے کے مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے رہنما ن لیگ حینف عباسی کو شوکت خانم کو  50 لاکھ روپے ہرجانہ ادا کرنے کا حکم سنایا۔

شوکت خانم میموریل ٹرسٹ نے 2012 میں حنیف عباسی کے خلاف 10 کروڑ روپے ہرجانے کا دعویٰ دائر کیا تھا۔

حینف عباسی نے شوکت خانم اسپتال میں فنڈز اور کرپشن کے حوالے سے خرد برد کا الزام لگایا تھا جس پر شوکت خانم میموریل ٹرسٹ نے حنیف عباسی کو دس کروڑ روپے ہرجانے کا نوٹس بھیجا تھا۔

کیس کا فیصلہ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج صاحبزادہ نقیب شہزاد کی عدالت نے سنایا۔

alphanew