لاہور: جانوروں کے کاٹنے سے متاثر ہونیوالوں کیلئے قائم واحد علاج گاہ بھی بند لاہور: جانوروں کے کاٹنے سے متاثر ہونیوالوں کیلئے قائم واحد علاج گاہ بھی بند
لاہور: جانوروں کے کاٹنے سے متاثر ہونے والوں کے لیے قائم واحد علاج گاہ 4 ماہ سے بند ہے جب کہ اب محکمہ صحت... لاہور: جانوروں کے کاٹنے سے متاثر ہونیوالوں کیلئے قائم واحد علاج گاہ بھی بند

لاہور: جانوروں کے کاٹنے سے متاثر ہونے والوں کے لیے قائم واحد علاج گاہ 4 ماہ سے بند ہے جب کہ اب محکمہ صحت نے سینٹر کو کورونا سیمپل ٹیوب کے اسٹور میں تبدیل کردیا۔ 

لاہور میں جانوروں کے کاٹنے سے متاثر ہونے والوں کے لیے قائم واحد سرکاری علاج گاہ محکمہ صحت کی لاپرواہی کی بھینٹ چڑھ گئی۔

سینٹر میں کام کرنے والے ملازمین کا کہنا ہے کہ 4 ماہ سے مریضوں کو ویکسین نہیں لگائی جا رہی، انجیکشن لگانے والا ڈاکٹر بھی چھٹیوں پر ہے، ویکسین کے لیے مریض سرکاری اسپتالوں سےانجیکشن لگواسکتے ہیں  لیکن فی الحال یہ سہولت اس سینٹر میں میسر نہیں ہے۔

ملازمین کا کہنا تھا کہ وہ 4 ماہ سے کورونا سیمپل ٹیوب پر بیج لگا کر پنجاب بھر میں سپلائی کر رہے ہیں جب کہ سیمپل ٹیوب کا تمام اسٹاک سینٹر میں رکھا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ محکمہ صحت کی جانب سے جانوروں کے کاٹنے سے متاثر ہونے والے مریضوں کی رہنمائی کے لیے کوئی اقدام نہیں کیا گیا۔

دوسری جانب مریضوں کا کہنا ہے کہ سرکاری اسپتالوں میں کورونا متاثرین کا رش ہے اور  وہاں سے علاج کرنے کے لیے انہیں بہت پریشانی کا سامنا ہے۔

alphanew