‘ہم نے اپنے آپ کو تو قرنطینہ میں بند کرلیا لیکن اندر کے شیطان کو بند نہیں کیا’ ‘ہم نے اپنے آپ کو تو قرنطینہ میں بند کرلیا لیکن اندر کے شیطان کو بند نہیں کیا’
پاکستان فلم اور ڈرامہ انڈسٹری کی مقبول ترین اداکارہ زارا نور عباس ناقدین پر برہم ہوگئیں۔ گزشتہ روز اداکار بہروز سبزواری کی اہلیہ کی... ‘ہم نے اپنے آپ کو تو قرنطینہ میں بند کرلیا لیکن اندر کے شیطان کو بند نہیں کیا’

پاکستان فلم اور ڈرامہ انڈسٹری کی مقبول ترین اداکارہ زارا نور عباس ناقدین پر برہم ہوگئیں۔

گزشتہ روز اداکار بہروز سبزواری کی اہلیہ کی سالگرہ کے موقع پر ان کے صاحبزادے شہروز نے اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر والدہ کے ساتھ تصویر شیئر کرنے کے ساتھ انہیں سالگرہ کی مبارکباد بھی دی۔

شہروز کی جانب سے شیئر کی جانے والی تصویر پر پاکستان فیشن انڈسٹری کی مقبول ترین ماڈل صدف کنول نے کمنٹ کیا جس میں انہوں نے شہروز کی والدہ کو ‘ماما(امی)’ کہہ کر مخاطب کیا اور تھوڑی دیر بعد صدف نے اپنا کمنٹ بھی ڈیلیٹ کردیا۔

اس سے قبل سوشل میڈیا پر صدف کنول اور اداکار شہروز سبزواری کے درمیان تعلقات کی افواہیں بھی گردش کر رہی تھیں لیکن شہروز کی جانب سے ان افواہوں کو بے بنیاد قرار دیا گیا تھا اور ان کا کہنا تھا کہ صدف کنول ان کی دوست ہیں۔

ان قیاس آرائیوں کے بعد ماڈل صدف کنول کے شہروز کی تصویر پر اس کمنٹ کے بعد سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے شہروز اور صدف کنول پر بے حد تنقید کی جانے لگی۔

سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے کی جانے والی تنقید پر اداکارہ زارا نور عباس برہم ہوگئیں اور انہوں نے اپنی پوسٹ کے ذریعے خیالات کا اظہار کردیا۔

زارا نور عباس نے اپنی ٹوئٹ میں لکھا کہ ‘آج کسی شخص نے دوسرے شخص کی والدہ کو ‘ماما(امی)’ کہہ دیا اور یہ ایک قومی خبر بن گئی’۔

اداکارہ نے ناقدین پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے لکھا کہ ‘میں یہ جان کر حیران ہوں کہ ہم سب قرنطینہ میں تو بند ہیں لیکن ہمارے اندرونی شیطان بند نہیں ہیں’۔

زارا نور عباس نے مزید کہا کہ ‘اگر آپ ابھی بھی اس بات کو اس مہینے کی سب سے بڑی خبر سمجھتے ہیں تو آپ نے اپنی زندگی کے تین ہفتے ضائع کردیے ہیں’۔

خیال رہے کہ چند ماہ قبل اداکار بہروز سبزواری کے صاحبزادے اور اداکارہ سائرہ یوسف نے چند ماہ علیحدگی اختیار کرنے کے بعد سوشل میڈیا پر باقاعدہ طلاق کا اعلان  کیا تھا۔

alphanew