پیپلزپارٹی نے وفاقی بجٹ کو پاکستان دشمن بجٹ قراردے دیا پیپلزپارٹی نے وفاقی بجٹ کو پاکستان دشمن بجٹ قراردے دیا
اپوزیشن جماعت پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) نے مالی سال 21-2020 کے وفاقی بجٹ کو پاکستان دشمن بجٹ قراردے دیا۔ وفاقی حکومت نے قومی... پیپلزپارٹی نے وفاقی بجٹ کو پاکستان دشمن بجٹ قراردے دیا

اپوزیشن جماعت پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) نے مالی سال 21-2020 کے وفاقی بجٹ کو پاکستان دشمن بجٹ قراردے دیا۔

وفاقی حکومت نے قومی اسمبلی میں آئندہ مالی سال 21-2020 کا 71 کھرب 37 ارب روپے کا وفاقی بجٹ پیش کردیا ہے۔

اپوزیشن جماعتوں نے وفاقی بجٹ کو عوام دشمن قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا ہے جب کہ پی پی نے بھی بجٹ کو پاکستان دشمن قرار دیا ہے۔ 

سینیٹر شیری رحمان کا کہنا تھا کہ موجودہ صورتحال میں کورونا کے علاوہ ٹڈل دل کا سامنا ہے، نہ فنانس کمیٹی کو آن بورڈ لیا گیا اور نہ ہی بجٹ پرکوئی بحث ہوئی، یہ کوئی بجٹ نہیں بلکہ اکاؤنٹنگ ایکسرسائز ہے۔

انہوں نے کہا کہ  اِس حکومت نے 18 ماہ میں جتنے قرض لیے، اتنے کسی حکومت نے نہیں لیے تھے، حکومت اس وقت لوگوں کو روزگار دینے کے بجائے بیروزگار کررہی ہے،  بجٹ میں صرف اعداد شمار آگے پیچھے کیے گئے ہیں۔

شیری رحمان کا کہنا تھا کہ یہ کسی شعبے کا دوست بجٹ نہیں بلکہ پورے پاکستان دشمن بجٹ ہے۔

alphanew